عمومی لسانیات کا نصاب۔ تحریر : فرڈی نینڈ سوسیئر (مترجمین: ابرار حسین، نعیم عباس)

 In ترجمہ

تعارف: بیسویں صدی میں فلسفۂ لسانیات کے اہم مفکرین میں سے ایک فرڈی نینڈ سوسیئر ( Ferdinand      de      Saussure ) ہے ۔ 1916ء میں سوسیئر  کی موت کے بعد اس کے شاگردوں نے اس کے نوٹس جمع کرکے پہلی مرتبہ ایک کتاب Course      in      General      Linguistics کے عنوان سے شائع کی۔ شاید یہ کہنا مناسب ہو گا کہ سوسیئر کی یہ کتاب بیسویں صدی کی موثر ترین چند کتابوں میں سے ایک ہے جس نے علوم کے متعدد شعبوں پر غیر معمولی اثرات مرتب کیے  ہیں۔ بلکہ یہ کہنا چاہیے کہ اس نے شعور، حقیقت اور زبان کے بارے میں کلاسیکی تصورات کو الٹ کے رکھ دیا ہے۔ اس کے نتیجے میں ایک نیا ذہن پیدا ہوا ہے۔ ہماری معلومات کی حد تک اس کتاب کا آج تک اردو میں ترجمہ نہیں ہوا جو کہ یقینا ایک قابل افسوس امر ہے۔ اس کتاب کی اسی اہمیت کے پیش نظر، جناب ابرار حسین اور نعیم صاحب نے اس کا اردو ترجمہ کرنا شروع کیا ہے جس کو درج ذیل فہرست کے مطابق قسط وار شیئر کیا جاتا رہے گا۔

باب اول:         عمومی لسانیات کا نصاب

باب دوم:         لسانیات کا موضوع، دائرہ کار اور دیگر علوم سے اس کا تعلق

Recommended Posts

Leave a Comment

Jaeza

We're not around right now. But you can send us an email and we'll get back to you, asap.

Start typing and press Enter to search